Surveillance
Self-Defense

اپنے ٹولز کا انتخاب کریں

آخری تازہ کاری: 
10-29-2018
اس صفحے کا ترجمہ انگریزی زبان سے کیا گیا ہے، انگریزی ورژن میں شاید تجدید ہوچکی ہو۔

بہت سی کمپنیوں اور ویب سائٹس کی طرف سے لوگوں کی مدد کیلئے حفاظتی ٹولز کی بڑی تعداد پیش کی جاتی ہے تاکہ لوگ اپنی ذاتی ڈیجیٹل سکیورٹی کو بہتر بناسکیں، ان میں سے آپ اپنے لئے بہترٹولز کا انتخاب کیسے کریں؟

ہمارے پاس ایسے ٹولز کی کوئی فول پروف لسٹ نہیں ہے جو آپ کا دفاع کرسکیں (اگرچہ آپ ہماری بعضTool Guidesمیں سے عمومی طر پر بعض کا انتخاب کرسکتے ہیں)۔ لیکن اگر آپ کو پتہ ہو کہ آپ کس چیز کو محفوظ رکھنا چاہتے ہیں اور کس سے محفوظ کرنا درکار ہے تو یہ گائیڈ چند بنیادی گائیڈ لائنز کا استعمال کرتے ہوئے مناسب ٹولز کے انتخاب میں آپ کی مدد کر سکتی ہے۔

یاد رکھئے، حفاظت کرنے کا مطلب یہ نہیں ہے کہ آپ کو ٹولز، یا ڈاؤن لوڈ ہونے والے سافٹ ویئر کا پتہ ہو۔ بلکہ حفاظت شروع ہی اس بات سے ہوتی ہے کہ آپ منفرد اور الگ قسم کے خطرات سے آشنا ہوں جن سے آپ کا سامنا ہوسکتا ہے اور یہ کہ ان خطرات سے کیسے نبرد آزما ہونا ہے۔ مزید معلومات کیلئے ہماری گائیڈ برائے اپنے خدشات کا تجزیہ کا مطالعہ کریں۔

 

حفاظت ایک عمل ہے کوئی خرید نہیں Anchor link

آپ اپنے زیرِ استعمال سافٹ ویئر یا نئے آلات کی خرید سے قبل یہ بات ذہن نشین کر لیں کہ آپکو کوئی بھی آلہ کسی بھی حالت میں کڑی نگرانی سے مکمل حفاظت فراہم نہیں کرسکتا۔ لہٰذا اپنی ڈیجیٹل سکیورٹی کی مشقوں سے متعلق مکمل طور پر سوچ بچار کرلینا بہت ضروری ہے۔ مثلاً اگر آپ حفاظتی ٹولز اپنے فون پر استعمال کرتے ہیں لیکن اپنے کمپیوٹر پہ کوئی پاس ورڈ نہیں لگاتے تو آپ کے فون پہ موجود وہ ٹولز آپ کی کوئی خاطر خواہ مدد نہیں کر پائیں گے۔ اگر کوئی آپ کے بارے میں کسی قسم کی معلومات حاصل کرنا چاہے تو اس معلومات کو حاصل کرنے کیلئے اسے کوئی مشکل پیش نہیں آئے گی بلکہ آسانی سے حاصل کر لے گا۔

دوسری بات یہ کہ ہر قسم کی چالوں یا حملہ آوروں سے بچاؤ کرنا قریب قریب ناممکن ہوتا ہے اس لئے آپ کو اس بات پہ دھیان دینا ہوتا ہے کہ کون لوگ آپ کا ڈیٹا حاصل کرنا چاہتے ہیں، اس میں ایسا کیا ہے جو وہ حاصل کرنا چاہتے ہیں، اور وہ اس ڈیٹا کو کن طریقوں سے حاصل کر سکتے ہیں۔ اگر آپ کو بڑا خطرہ کسی پرائیویٹ تفتیش کار سے ہے کہ وہ آپ کی حرکات کی نگرانی کر رہا ہے وہ بھی کسیا انٹرنیٹ کڑی نگرانی کے آلات کے بغیر تو آپ کو "این ایس اے پروف" والے ٹولز کی طرح کوئی مہنگا خفیہ کار فون سسٹم خریدنے کی کوئی ضرورت نہیں۔ لیکن دوسری طرف اگر آپ کو کسی حکومت کا سامنا ہے جو حسبِ معمول اپنے مخالفین کو جیل بھیج دیتی ہیں کیونکہوہ بے ضرر آوازوں کی ترتیب، پہلے سے مختص پیغام رسانی کیلئے کوڈز کی ترتیبات کو مرتب کرنے جیسے خفیہ کار ٹولز کا استعمال کرتے ہیں ایسے وقت میں ثبوت چھوڑنے کا جو آپ اپنے لیپ ٹاپ پہ خفیہ کاری کے سافٹ ویئر کے طور پہ استعمال کرتے ہیں اس کی بجائے آسان تراکیب کا استعمال کریں۔ ممکنہ حملے جن سے آپ بچنے کا منصوبہ بنا رہے ہوتے ہیں وہ خطرات کا تجزیہکہلاتے ہیں۔

ایک ٹول کی بارے میں اس کی ڈاؤن لوڈنگ ، خریداری اور استعمال سے پہلے آپ یہاں دیئے گئے چند سوالات پوچھ سکتے ہیں۔

 

یہ کتنا شفاف ہے؟ Anchor link

حفاظتی محققین کے مابین یہ مضبوط یقین پایا جاتا ہے کہ دیانت داری اور شفافیت مزید محفوظ آلات کی طرف لے جاتے ہیں۔

ڈیجیٹل حفاظتی برادری کی جانب سے استعمال شدہ اور سفارش کردہ زیادہ تر سافٹ ویئر اوپن سورس ہیں اور ان تک کھلی رسائی ہے۔ اس کا مطلب یہ ہوا کہ کوڈ جو کام کا طریقہ بتاتا ہے وہ دوسروں کیلئے جانچ پڑتال، ترمیم اور اشتراک میں عوامی رسائی کا باعث ہے۔ ان ٹولز کے بنانے والے اپنے پروگرام کے کام کرنے سے متعلق شفافیت کا ثبوت دیتے ہوئے دوسروں کو شامل کرتے ہیں کہ وہ اس پروگرام کی بہتری اور حفاظتی نقائص پہ نظر رکھیں۔

اوپن سافٹ ویئر بہتر حفاظت کیلئے مواقع تو فراہم کرتا ہے لیکن اس کی ضمانت نہیں دیتا۔ اوپن سروس کا فائدہ مختلف حصوں میں کوڈ چیک کرتے ہوئے تکنیک کاروں کی برادری کو جاتا ہے جو چھوٹے منصوبوں کسی حد تک کوڈ، جو چھوٹے منصوبوں کیلئے (حتٰی کہ مقبول اور پیچیدہ کیلئے بھی) حاصل کرنا شاید مشکل ہو۔

کسی ٹول پر غور کرتے ہوئے یہ دیکھ لیجئے کہ اس کا سورس کوڈ دستیاب ہے اور آیا وہ اس کی سکیورٹی کے معیار کی تصدیق کیلئے کوئی خود مختار سیکیورٹی آڈٹ رکھتا ہے۔ سب سے کم درجے کی بات یہ ہے کہ سافٹ ویئر یا ہارڈ ویئرکو ایک مفصل تکنیکی وضاحت رکھنی چاہئے کہ وہ دوسرے ماہرین کے تجزیئے کیلئے کس طرح کام کرتا ہے۔

 

تخلیق کار اسکے فوائد اور نقصانات کے متعلق کتنا واضح ہیں؟ Anchor link

کوئی بھی سافٹ ویئر یا ہارڈویئر مکمل طور پر محفوظ نہیں ہوتا۔ تخلیق کار یا فروخت کرنے والے جو اپنی مصنوعات کے بارے میں دیانت داری سے کام لیتے ہیں انہیں تلاش کیجئے۔

مفروضوں پہ مبنی بیانات پہ یقین مت کریں جو یہ کہتے ہوں کہ یہ کوڈ ‘‘ عسکری درجہ ’’ یا ‘‘ این۔ ایس۔ اے سے بچاؤ کرنے والا’’ ہے: ان کا کوئی مطلب نہیں ہوتا بلکہ یہ بیانئے اشارہ دیتے ہیں کہ تخلیق کار حد سے زیادہ خود اعتمادی کا شکار ہیں یا اپنی مصنوعات میں ممکنہ ناکامیوں کا سوچنے سے گریز کرتے ہیں۔

کیونکہ حملہ آور ٹولز کی حفاظت کو ختم کرنے کیلئے ہمیشہ نئے طریقے دریافت کرتے رہتے ہیں اس لئے سافٹ ویئر یا ہارڈ ویئر کو اکثر نئے خطرات سے نمٹنے کیلئے اپ ڈیٹ کرنے کی ضرورت ہوتی ہے۔ اگر تخلیق کار ایسا کرنے پر رضا مند نہیں ہوتے تو اس کے سنگین نتائج سامنے آسکتے ہیں کیونکہ یا تو وہ بری تشہیر سے ڈرتے ہیں یا پھر انھوں نے مسائل کو حل کرنے کیلئے کوئی بنیادی ڈھانچہ تشکیل نہیں دیا۔ ان تخلیق کاروں کو جانئے جو ان اَپ ڈیٹس سے متعلق راضی ہیں اور جو اپنے کام کیساتھ دیانتداری اور شفافیت سے کام لیتے ہیں۔

ٹول بنانے والوں کا آگے کا رویہ ان کے ماضی کی کارکردگیوں سے متعلق جاننے کا ایک اچھا اشارہ ہے۔ اگر ٹول کی ویب سائٹ معمول کی اَپ ڈیٹس اور معلومات کے گزشتہ ایشوز اور لنکس کی تفصیل دے؛ جیسے خصوصاً جب سے سافٹ ویئر کی آخری تازہ کاری سے اب تک کتنا عرصہ ہوگیا ہے ؛ تو آپ کو زیادہ پتہ چل سکتا ہے کہ وہ مستقبل میں بھی یہ سروس مہیا کرتے رہیں گے۔

 

اگر تخلیق کار ناکام ہوں تو کیا ہوتا ہے؟ Anchor link

جب کسی سافٹ ویئر یا ہارڈویئر کو حفاظتی ٹول بنانے والے بناتے ہیں تو (بالکل آپکی طرح) انہیں بھی ایک واضح علامتی اندیشے کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ ایک بہترین تخلیق کار واضح بیان کرتا ہے کہ وہ اپنی دستاویزات میں آپ کو کس طرح کے نقصانات سے بچا سکتے ہیں۔

لیکن ایک حملہ آور ایسا ہوتا ہے جس کے بارے میں کئی تخلیق کار خود سے یہ سوچنا ہی نہیں چاہتےکہ اگر وہ سمجھوتہ کرلیں یا اپنے ہی صارفین پر حملہ کا فیصلہ کرلیتے ہیں تو کیا ہوتا ہے؟ مثلاً ایک کمپنی کو عدالت یا حکومت ذاتی کوائف کو ترک کردینے یا ‘‘ بیک ڈور’’ تخلیق کرنے پر مجبور کرے جو ان کے آلہ پر لگائے گئے حفاظتی اقدامات ختم کر دیں گے۔ آپ تخلیق کاروں کی بنیاد پر عدالتی کارروائی زیرِ غور لا سکتے ہیں ۔ مثلاً ایک امریکی ساختہ کمپنی ایران کے عدالتی احکامات کے خلاف مزاحمت کرنے کے قابل ہوگی چاہے وہ امریکی احکامات پر عمل پیرا ہی کیوں نہ ہوتی رہے۔

اگرچہ ایک تخلیق کار حکومتی دباؤ کیخلاف مزاحمت کرنے کے قابل پوتا ہے لیکن ایک حملہ آور ٹول بنانے کے سسٹم میں مداخلت کرکے اسکے صارفین پر حملے کر کے ویسے ہی نتائج حاصل کرنے کی کوشش کر سکتا ہے۔

سب سے زیادہ محفوظ ٹول وہ ہیں جو اس پر ممکنہ حملے پر غور کرنے اور اس کیخلاف دفاع کیلئے تیار کئے جاتے ہیں۔ ایک تخلیق کار ایسا نہیں کرے گا ایسے وعدوں کی بجائے اس زبان کی تلاش کریں جو یہ دعوٰی کرتی ہو کہ ایک تخلیق کار نجی کوائف تک رسائی حاصل نہیں کر سکتا۔ نجی کوائف کیلئے عدالتی احکامات کیخلاف لڑنے والے شہرت یافتہ اداروں کی تلاش کریں۔

 

کیا اس کی آن لائن باز طلبی یا اس پر تنقید کی گئی ہے؟ Anchor link

کمپنیاں اپنی مصنوعات فراخت کرنے اور اپنےنئے سافٹ ویئر کی سر گرم تشہیر کیلئے گمراہ کرنے کیلئے سراسر جھوٹ یاگمراہ کن مواد کا استعمال کیا جاسکتا ہے۔ ایک مصنوعات جو دراصل محفوظ تھی مستقبل میں ہولناک خرابیاں رکھتی ہوئی پائی جا سکتی ہے۔ اس بات کا یقین کرلیں کہ جو بھی آلہ آپ استعمال کرہے ہیں اسکی تازہ ترین معلومات کے بارے میں آپ باخبر ہیں۔

ایک شخص کو کسی ٹول کی تازہ ترین معلومات سے آراستہ ہونے کیلئے کافی کام کرنا پڑتا ہے۔ اگر آپ کے ساتھی کوئی خاص مصنوعات یا سروس کا استعمال کرتے ہیں تو معلومات سے استفادہ کیلئے ان کے ساتھ ساتھ کام کرتے رہیں۔

 

مجھے کون سا فون اور کون سا کمپیوٹر خریدنا چاہئے؟ Anchor link

دفاعی تربیت کاروں سے اکثر پوچھا جاتا ہے؛ ’’کیا مجھےاینڈرائیڈ خریدنا چاہئے یا آئی فون‘‘؟ یا ’’ کیا مجھے PCخریدنا چاہئے یا Mac‘‘؟ یا ’’مجھے کون سا آپریٹنگ سسٹم استعمال کرنا چاہئے‘‘؟ ان سوالات کا جواب دینا کوئی آسان کام نہیں ۔ سافٹ ویئر یا ڈیوائسز کی حفاظت کے معاملے میں ردو بدل نئے نقائص کے سامنے آنے اور پرانے مسائل کو حل کرنے سے ہوتی رہتی ہے۔ کمپنیاں آپ کو بہتر حفاظتی حل دینے میں ایک دوسرے سے سبقت لینے کوترجیح دے سکتی ہیں یا اس دفاع کو کمزور کرنے میں حکومتوں کے دباؤ میں بھی آسکتی ہیں۔

بعض معمول کے مشورے زیادہ تر صحیح ہوتے ہیں۔ جب آپ کوئی نئی ڈیوائس یا کوئی نیا آپریٹنگ سسٹم خریدیں تو نئے سافٹ ویئر اَپ ڈیٹس کیساتھ اس کی تجدید کرتے رہیں۔ اَپ ڈیٹس اکثر ان پرانے کوڈ میں دفاعی مسائل کو حل کریں گی جن سے حملے ناجائز فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔ یہ بات نوٹ کیجئے کہ بعض پرانے فون اور آپریٹنگ سسٹمز آگے چل کر دفاعی اَپ ڈیٹس کیلئے بھی مدد نہیں کر پائیں گے۔ عموماً مائیکرو سافٹ یہ بات واضح کر چکا ہے کہ Windows Vista, XP, یا اس سے پہلے والے کے ورژن انتہائی دفاعی مسائل کیلئے بھی کوئی حل نہیں نکالیں گے۔ جس کا مطلب یہ ہوا کہ اگر آپ ان میں سے کسی کا استعمال کرتے ہیں تو آپ ان سے یہ امید مت رکھیں کہ یہ آپ کو حملہ آوروں سے بچا لیں گے۔ OS X سے قبل 10.11 یا EI Capitan پر بھی یہی بات لاگو ہوتی ہے۔

اب جب کہ آپ کو پتہ چل گیا ہے کہ آپ کو کن خطرات کا سامنا ہوسکتا ہے اور کسی ڈیجیٹل سکیورٹی کی مد میں کن باتوں کا خیال رکھنا ہے تو ٹولز کے انتخاب میں اب آپ زیادہ احتیاط برتیں گے کہ منفرد حالات کے پیشِ نظر کون سے ٹولز مناسب ہوسکتے ہیں۔

 

سرویلنس سیلف ڈیفنس میں بیان کردہ مصنوعات Anchor link

ہم یہ یقین دلانے کی کوشش کرتے ہیں کہ سافٹ ویئر یا ہارڈویئر جن کو ہم اس رہنمائی میں بیان کرتے ہیں ہمارے مذکورہ بالا معیار پر پورا اترتے ہوں۔ فی الحال صرف فہرست کردہ مصنوعات کے لئے ہم نے نیک نیتی سے کوشش کی ہے کہ ہم؛

  • اب تک ڈیجیٹل سکیورٹی کے بارے میں ہم جو کچھ جانتے ہیں اس کی پختہ بنیادوں سے آشنا ہیں،
  • عموماً ان کے آپریشنز (اور ان کی ناکامیوں ) سے متعلق شفاف رہیں،
  • ان امکانات کے خلاف دفاع رکھتے ہیں جن سے تخلیق کار خود ناکام ہوجائیں گے، اور
  • حال حاضر میں وسعت اور تکنیکی قابلِ علم صارف بنیاد کے ساتھ برقرار رکھا ہوا ہے۔

اس تحریری مرحلے میں ہم یہ یقین رکھتے ہیں کہ عوام الناس کی ایک بڑی تعداد ان کے نقائص پر نظر رکھے ہوئے ہے اور لوگوں میں ان خدشات کو ابھاریں گے۔ برائے مہربانی یہ سمجھ لیں کہ جانچ پڑتال کرنے یا انکے تحفظ کے بارے میں آزادانہ یقین دہانیاں دلانے کیلئے ہمارے پاس وسائل نہیں ہیں۔ ہم ان مصنوعات کی توثیق نہیں کر رہے اور نہ ہی ہم ان کے مکمل تحفظ کی ضمانت دے سکتے ہیں۔

JavaScript license information